وزیراعلیٰ پنجاب سے اراکین اسمبلی کی ملاقات، مسائل سے آگاہ کیا


 لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز سے ارکان صوبائی اسمبلی نے ملاقات کی اور اپنے حلقوں کے مسائل اور ضروریات سے آگاہ کیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز سے صوبائی اراکین اسمبلی چودھری شافع حسین، راجہ محمد اسلم خان، خالد جاوید گھرال، مدد علی شاہ، چودھری اعجاز احمد، حسن عسکری شیخ، تاشفین صفدر، سلمیٰ سعید اور سیدہ ثمرین تاج نے ملاقات کی۔

اس کے علاوہ سید علی حیدر گیلانی، ملک واصف مظہر، محمد اقبال، غضنفر علی خان، عامر علی شاہ، نرگس فائزہ ملک، رابعہ نذیر اور دیگر بھی ملاقات کرنے والوں میں شامل تھے۔

ٹکٹ ہولڈر سعود مجید، ایم پی اے خالد ججہ اور پی پی رہنما ندیم افضل چن نے بھی وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز سے ملاقات کی۔

ارکان صوبائی اسمبلی نے عوامی مسائل اور ضروریات سے وزیراعلیٰ پنجاب کو آگاہ کیا اور اپنے حلقوں میں ڈویلپمنٹ کے لئے اپنی تجاویز اور سفارشات پیش کیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز نے اراکین اسمبلی کی تجاویز اور سفارشات نوٹ کیں اور قابل عمل تجاویز پرعملدر آمد کے احکامات جاری کیے۔

صوبائی اسمبلی کے اراکین نے رمضان نگہبان پیکیج کی کامیابی پر وزیراعلیٰ مریم نواز کو مبارکباد پیش کی اور ستھرا پنجاب سمیت پنجاب حکومت کے دیگر پراجیکٹس کو سراہا۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب مریم نواز کا کہنا تھا کہ سب کی وزیر اعلیٰ ہوں، مل کر چلیں گے، پنجاب بھر میں 600 سڑکوں کی تعمیر ومرمت، 5 ایکسپریس ویز اور 3 موٹر ویز بنائیں گے، صوبہ بھر میں 100 فیصد مفت ادویات اور ہوم ڈلیوری جلد شروع کر دی جائے گی۔

مریم نواز نے کہا کہ دیہاتوں اور دور دراز علاقوں میں علاج معالجے کیلئے موبائل ہسپتال اور کلینک آن ویل پراجیکٹ جلد شروع ہو گا، صوبے بھر کے دیہی اور بنیادی مراکز صحت کو 6 ماہ کے اندر ری ویمپ کیا جائے گا، پنجاب بھر میں فراہمی اور نکاسی آب کے امور میں بہتری لانے کیلئے کوشاں ہیں۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ آئندہ 3 ماہ میں پنجاب کے 18 مزید شہروں میں سیف سٹی پراجیکٹس کو فعال کیا جائے گا، 36 اضلاع میں سالڈ ویسٹ کولیکشن کا جامع نظام لا رہے ہیں، طلبہ کو 20 ہزار موٹر بائیکس دی جا رہی ہیں، ہر ضلع میں 3 ہزار بائیکس دی جائیں گی۔

اس موقع پر اراکین صوبائی اسمبلی نے کہا کہ پنجاب میں بہتری لانے کی کوشش میں وزیراعلیٰ کے ہمقدم ہیں، آپ کے اقدامات قابل تحسین ہیں، کامیابی کے لئے دعا گو ہیں، آپ کا وزیراعلیٰ بننا ہر خاتون کا اعزاز ہے۔ 

0/Post a Comment/Comments

before post content

after post