وزیر خزانہ ڈاکٹر شمشاد اخترکا اسلام آباد میں منعقدہ 'پاکستان ڈیجیٹل اسٹیک' ورکشاپ سے خطاب

وزیر خزانہ ڈاکٹر شمشاد اخترکا اسلام آباد میں منعقدہ 'پاکستان ڈیجیٹل اسٹیک' ورکشاپ سے خطاب

وزیر خزانہ ڈاکٹر شمشاد اخترکا اسلام آباد میں منعقدہ 'پاکستان ڈیجیٹل اسٹیک' ورکشاپ سے خطاب

بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن اور کارنداز کے پاکستان میں ڈیجیٹل سٹیک کی تخلیق اورعمل درآمد کے حوالے سے اقدامات قابلِ ستائش ہیں، وزیر خزانہ

گیٹس فاؤنڈیشن اور کارنداز کی جانب سے ڈیجیٹل سٹیک کی تخلیق  ڈیجیٹلائیزیشن کی حکومتی پالیسی سے موافق ہے، وزیر خزانہ

ڈیجیٹل ادائیگیاں عام شہریوں اور کاروباری افراد کو مالی معاملات بروقت اور باآسانی مکمل کرنے کا اختیار دیتی ہیں، وزیر خزانہ

اسٹیٹ بینک،ایس ای سی پی،احتساب بیورو اورنادراسمیت  دیگر حکومتی ادارے  پاکستان ڈیجیٹل اسٹیک کی عمل داری میں حصہ دار ہیں، وزیر خزانہ

پاکستان ڈیجیٹل اسٹیک کے ذریعے شراکتیں قائم کر کے ملک کو ڈیجیٹل خطوط پر استوار کرنے کے خواہاں ہیں، ڈاکٹر شمشاد اختر

یہ منصوبہ پاکستان کی ترقی کے لیے انتہائی اہم ہے،  اسکی کامیابی کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے، وزیر خزانہ

ہم پاکستان میں مالی شمولیت، صنفی خودمختاری، غربت میں کمی، اور گورننس میں شفافیت لانے کے عہد پر کارفرما ہیں، وزیر خزانہ

متحدہ عرب امارات، ایستونیا، سنگاپور میں ڈیجیٹل اسٹیک کے توسط سے گورننس کے نظام میں خاطرخواہ بہتری آئی، وزیر خزانہ

ڈیجیٹل اسٹیک کے ذریعے  کروڑوں پاکستانیوں کو روزمرہ لین دین میں سہولت ہو گی، وزیر خزانہ

عالمی سطح پر ڈیجیٹل اسٹیک کی کامیابی اسکی بے پناہ استعداد کو ظاہر کرتی ہے، ڈاکٹر شمشاد اختر

ڈیجیٹل اسٹیک کے ذریعے عوام کے حکومتی اداروں سے تعلق اورمعاشی سرگرمیوں میں بہتری آئے گی، وزیر خزانہ

اسٹیٹ بینک اور کاراندازکے اشتراک سے 'راست' پلیٹ فارم قائم ہوا، اب اس ڈیجیٹل مالیاتی نظام میں جدت لانی ہے، وزیر خزانہ

0/Post a Comment/Comments