ریجنل نیوز

 

 

01

حویلی لکھا میں مفت آٹا پوائنٹ پر بلدیہ ملازمین نے جعل سازی سے سرکاری آٹے کے 122 تھیلے خورد برد کر ليئے ۔

فلور مل کاملازم ملوث نکلا ڈپٹی کمشنر اوکاڑہ نے مفت آٹا کرپشن کا نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کے خلاف  کارروائی کی ہدایت کر دی ۔پولیس نے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

02

ٹھل کے تھانہ اے سیکشن کی حدود گرڈ اسٹیشن روڈ کے مقام  پر ڈکیتوں نے  اسلحہ کے زور پر دن دیہاڑے نوجوان کو اغوا کر لیا ۔

 

ٹھل کے تھانہ اے سیکشن کی حدود گرڈ اسٹیشن روڈ کے مقام سے نوجوان  کو ڈکیت نے  اسلحہ کے زور پر اغوا کر کےلے  گئے۔ اغو اء کاروں  کا ورثہ سےتاوان  کا مطالبہ جبکہ مغوی محنت کش ہے۔ورثا  کا کہنا ہے ہم اتنی بڑی  رقم کابندوبست نہیں  کر سکتے۔ ورثا  نےایس ایس پی جیکب آباد اورڈی آئی جی لاڑکانہ سے مطالبہ کیا ہے کہ ٹھل کے نااہل ایس ایچ او کو ہٹایا جائے۔اور مغوی کو بازیاب کروایا جائے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

03

 

روجھان کے علاقے  کچے  میں ڈاکوں کے خلاف گرینڈ آپریشن نویں روز میں داخل  جدید ہتھیاروں سے لیس پولیس کے مزید تازہ دم دستے آپریشنل ایریا میں پہنچ گئے۔ کلیئر کرائے گئے گئے ایریا میں پولیس پکٹس قائم - ڈی پی او ناصر سیال کی کمانڈ میں پولیس نے اندرون کچہ کے علاقہ چک کُپڑا اور خیر پور بمبلی کا گھیراؤ کر لیا چک کُپڑا اور خیر پور بمبلی میں دہشت گردوں سے فائرنگ کا تبادلہ جاری پولیس نے پیشہ وارانہ مہارت اور بہترین حکمت عملی سے عسکریت پسندوں کے ٹھکانوں کے گرد پوزیشن سنبھال رکھی ہیں۔جوانوں نے جرات و بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے کچی مورو، کچہ جمال کے بعد چراغ شاہ میں عسکریت پسند وں کے ٹھکانے تباہ کر کے ان کی پناہ گاہیں مسمار کر دی  - آر پی او ڈیرہ غازی خان کیپٹن (ر) سجاد حسن خان کا آپریشن کی مکمل نگرانی  صورتحال کے مطابق حکمت عملی ترتیب دینے کا سلسلہ جاری ڈی پی او راجن پور ناصر سیال کا کہنا تھا چک کپڑا اور خیر پور بمبلی میں فائرنگ کے تبادلے اور مسلسل پیش قدمی سے  ہلاک ڈاکووں کی تعداد 4  ہوگئی ہے  دہشت گردوں کے 16 سہولت کار گرفتار کیے جا چکے ہیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

04

قاضی احمد کےعلاقےشہید بینظیر آباد میں  بڑھتی ہوئی   بدامنی اورڈکیتی  کی وارداتوں اور  امن امان کی صورتحال کو کنٹرول کرنے میں ناکامی پر  ایس ٹی پی کے مرکزی رہنما  نثار کیریو کی سربراہی میں احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ریلی میں شریک شرکاء نے امن بحال کرو،  ایس ایس پی شہید بینظیر آباد کو ہٹاؤ کے نعرے لگائے۔جبکہ  رابطے کرنے پر  ایس ایس پی  شہید بینظیرآباد امیر سعود مگسی کے ترجمان نے کہا کے  بلکل  ضلع بھر میں امن امان کی صورتحال کنٹرول میں  ہے  ایس ایس پی امیر سعود مگسی کی ہدایات پر پولیس  نےرات دن ڈیوٹی کر کے امن کی فضا کو کنٹرول رکھا  ہوا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

05

 

کہروڑپکا میں ڈکیتیوں کا سلسلہ تھم نہ سکا۔ ڈی ایس پی سرکل کی ناقص حکمت عملی کی وجہ سے شہریوں کو ڈاکو کے رحم وکرم پر چھوڑدیا گیا۔

ایک دن میں ڈکیتی کی دو وارداتیں   دنیاپورروڈ پر الرحمان فارمیسی سے ڈکیت  لاکھوں روپے لے اڑے اور تھانہ  سٹی کی حدود میں ڈکیتوں نے شہری سے موٹرسائیکل موبائل چھین لیا اے ون  ٹی وی  نے سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کر لی بڑھتی ہوئی ڈکیتیوں کے باوجود بھی شہر بھر میں کوئی ناکہ بندی نہ کی گئی  پولیس ترجمان سے بار بار رابطہ کرنے کے باوجود بھی کوئی وضاحت نہ دی گئی

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

06

ٹھری میرواه  میں سیلاب کی وجہ سے جو گاوں تباہ ہو گئے تھے۔سندھ حکومت  نے ان کی بحالی کےلئے کوئی حقمت عملی نہیں بنائی

 گاوں غلام محمد اکبر، گاوں فقیر شفیع محمد شر،اورگاوںفقیر مولی بخش شر آٹھ ماہ سے پانی مین ڈوبے  ہوئے ہیں ۔خیرپور انتطامیہ نے پانی نکالنے کے نام پر اربوں کی کرپشن کی ہے   مزید تفصیلات جانتے قمبر  علی شر سے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

07

 سیا لکوٹ میں ہیو مین ویلفیئر آرگنائزیشن(پاکستان) کے زیر اہتمام سیمینار ظلم پر خاموشی گناہ ہے منعقد ہوا جس میں سینکڑوں شہریوں نے شرکت کی سیمینار کے شرکاء سے مقررین نے خطاب کیا چیئرمین ایچ ڈبلیو او شہزاد اکبر بٹ ایڈووکیٹ نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم ایچ ڈبلیو او کے پلیٹ فارم سے شہریوں میں شعور بیداری کیلئے عملی طور پر جدو جہد کر رہے ہیں شہری اپنے حق پر کسی کو ڈاکہ نہ مارنے دیں زیادتی پر کسی صورت خاموشی اختیار نہ کریں ظالم کو اس کے انجام تک پہچانے کیلئے پو ری کوشش کریں ایچ ڈبلیو او کے پلیٹ فارم سے ہم کسی بھی مظلوم کی مدد رو رہنمائی کیلئے ہمہ وقت حاضر ہیں جہاں پر بھی ظلم ہو قانون کا احترام ہر شہری پر فرض ہے اور قانون شکنی کرنے والوں کو قانونی طریقے سے ان کے انجام تک پہچانا بھی اخلاقی فرض بنتا ہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

08

ماڈل ہائی سکول خان پور سے میٹرک کا مطالعہ پاکستان کا پیپر ایک روز قبل ہی لیک ہو گیا- پیپر شروع ہونے سے پہلے ہی 3 ہزار میں ایک ایک کاپی فروخت ہو گئی- آج صبح ہونے والے پیپر کے لیے گزشتہ رات سے ہی سوشل میڈیا پر "برائے فروخت" کے سٹیٹس لگے ہوئے تھے-فروخت ہونے والے پیپر کی کاپی ہاتھ سے لکھی ہوئی تھی ، تمام سوالات آج کے پیپر میں موجود تھے - محنتی طلباء کا مستقبل داؤ پر لگ گیا ، والدین کی ارباب اختیار سے نوٹس لینے کی اپیل

ہیڈ ماسٹر ماڈل ہائی سکول کا  کہنا تھا کہ

 پیپر شروع ہونے سے 15 منٹ قبل سیلڈ بنڈل ملتا ہے ، پیپر لیک ہونے میں ہماری کوئی کوتاہی نہیں ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

 

0/Post a Comment/Comments

before post content

after post